Press Statements

Silence of govt, civil society on riots and Muslim techie's murder is ominous: Mushawarat

Original_aimmm-logo-white

New Delhi, 5 June 2014: Civil Society and government's silence over the spate of riots, murders and threats to Muslims which started with the BJP win in the general elections is ominous, said Dr Zafarul-Islam Khan, President of the All India Muslim Majlis-e Mushawarat, the apex body of Indian Muslim organisations.

Dr. Khan said that the cold-blooded murder of the Pune techie Mohsin Sadiq by a Hindutva terrorist organisation two days ago has failed to arouse media, civil society and government at both state and central levels and this demonstrates to what levels communal bias and apathy towards crimes against Muslims has seeped in our society. This trend has received fillip by the advent of the BJP rule at the Centre. There is no talk of banning the criminal organisation whose leaders roam around freely despite facing dozens of criminal charges and there is not even a whisper about paying compensation to the bereaved family although in similar cases central and state governments and political parties compete with each other to visit the bereaved family and pay compensation.

Dr Khan said security of the minorities and marginalised sections will be the litmus test for the new government. The nation and the world will judge this government by the way it treats hapless minorities and reins in the Hindutva goons who think that they now have a licence to attack minorities with impunity.

Dr Khan appealed to Muslims and all justice-loving citizens of the country to come forward to check these dark forces, raise their voice and take all legal steps to protect themselves and to remind the government of its legal and constitutional duties.

[end]

Issued at New Delhi on 5 June 2014 by
 -------------------------------------------------------
ALL INDIA MUSLIM MAJLIS-E-MUSHAWARAT
[Umbrella body of the Indian Muslim organisations]
D-250, Abul Fazal Enclave, Jamia Nagar, New Delhi-110025  India
Tel.: 011-26946780  Fax: 011-26947346

Email: mushawarat@mushawarat.com   Web: www.mushawarat.com  Photos: flickr/images

Does the public/media outrage  to the murder of Nido Tania (North East India racism victim in Delhi) and  that of Mohsin Sadiq (For being Muslim in Pune) match?

Urdu Translation:

فسادات اور مسلم نوجوان کے قتل پر

گورنمنٹ اور سول سوسائٹی کی خاموشی معنی خیز ہے: مشاورت

نئی دلی، ۵ جون ۲۰۱۴: مسلم تنظیموں کی وفاق آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے صدر ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے آج یہاں کہا کہ بی جے پی کی انتخابی کامیابی کے بعد ہونے والے فسادات، دھمکیوں اور قتل پر سول سوسائٹی اور حکومت کی خاموشی بہت معنی خیز ہے۔ ڈاکٹر ظفرالاسلام نے کہا کہ دوروز قبل پونا میں مسلم کمپیوٹرانجینئر محسن صادق کا ہندوتوا دہشت گردوں کے ہاتھوں بے دردی سے قتل میڈیا، سول سوسائٹی ، صوبائی اور مرکزی حکومتوں کی توجہ مبذول نہ کراسکا جس سے واضح ہوتاہے کہ مسلمانوں پر مظالم کے تئیں فرقہ واریت اور سرد مہری کس حد تک پہنچ چکی ہے۔ اس رویہ کو بی جے پی کی انتخابی جیت سے مزید تقویت ملی ہے۔ پونا کے قتل کی ذمہ دار ہندوتوا دہشت گرد تنظیم کو غیر قانونی قرار دینے کی کوئی بات نہیں ہورہی ہے اور اس کے لیڈر درجنوں جرائم کا ارتکاب کرکے بھی آزادانہ گھوم رہے ہیں۔ یہی نہیں بلکہ مقتول انجینئر کے گھر والوں کو کوئی معاوضہ دینے کی بات سرگوشیوں میں بھی نہیں ہورہی ہے جبکہ اس طرح کے دوسرے واقعات میں نہ صرف صوبائی اور مرکزی حکومتیں بلکہ سیاسی پارٹیاں بھی دوڑ کر معاوضے کااعلان کرتی ہیں۔


ڈاکٹر خان نے کہا کہ اقلیتوں اور کمزور طبقات کی حفاظت نئی حکومت کے لئے بڑا امتحان ہے۔ ملک اور ساری دنیا اس حکومت کو اقلیتوں کے ساتھ اس کے سلوک اور دہشت گردوں کو لگام کسنے سے جانچے گی ۔ ڈاکٹر خان نے مسلمانو ں اورتمام انصاف پسند شہریوں سے اپیل کی کہ ان مجرم طاقتوں کو روکنے کے لئے آگے آئیں ، اپنی آواز بلند کریں اور اس سلسلہ میں وہ تمام قانونی راستے اپنائیں جس سے ان کی حفاظت ہوسکتی ہے اور اسی کے ساتھ موجودہ حکومت کو بھیاس کیآئینی اور قانونی ذمہ داریاں یاد دلائیں۔

 

)ختم)

blog comments powered by Disqus