Press Statements

دہشت گردی" کے مسئلے سے نپٹنے کے لئے مسلم تنظیموں کے فیصلے"

نئی دہلی، ۳۰؍مئی ۲۰۱۲ء : آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کی دعوت پر کل بروز منگل ۲۹؍مئی مشاورت کے صدر دفتر میں ملّی تنظیموں کے قائدین اور اہم شخصیات کی میٹنگ منعقد ہوئی جس میں ’’دہشت گردی‘‘ کے نام پر مسلم کمیونٹی کو منظم طریقہ سے دہشت زدہ کرنے کے مسئلے پرتفصیلی غور وخوض ہوا۔ سب کی مشترکہ رائے تھی کہ دہشت گردی کے نام پر مسلم قوم کی انفرادی اور اجتماعی ترقی روکنے کے لئے ایک مہم چل رہی ہے اور پچھلے دنوں کی پے درپے گرفتاریاں اسی کی ایک کڑی ہیں۔ شرکاء اجتماع کی مشترکہ رائے ہے کہ اس مسئلہ کو وقتی تدابیر سے حل نہیں کیا جاسکتا بلکہ ایک منظم اور دور رس طریقہ سے ہی اس کو حل کیا جا سکتا ہے۔

اجتماع میں طے پایا کہ مقدمات کو لڑنے، مظلومین کو بر وقت مدد دینے اور اس مسئلہ کو مسلسل اٹھانے اور دستاویزی نوعیت کی تحریریں شائع کرنے کے لئے ایک مستقل خصوصی فنڈ قائم کیا جائے جس کے ذریعہ یہ سب کام انجام پائے۔ اس کام کے لئے مشاورت کے تحت ایک قانونی ٹیم(لیگل سیل) بھی بنائی جائے گی جو مسئلہ پر مستقل نظر رکھے ، حسبِ ضرورت کارروائی کرے اور مقامی وکلا سے مدد لے۔ یہ بھی طے پایا کہ مسلم قوم سے اپیل کی جائے کہ شہر شہر، ضلع ضلع سڑک پر اتر کر اپنا احتجاج درج کرائے۔ اسی کے ساتھ مسلم قوم کی توجہ دلائی جائے کہ مظلومین اور ان کے خاندانوں کے ساتھ عمدہ سلوک اور اچھے تعلقات برقرار رکھیں کیونکہ محض کسی کے پکڑے جانے سے کوئی جرم ثابت نہیں ہوتا ہے ۔ حقیقت ہے کہ ٹاڈا اور پوٹا کے زمانے سے ہی تقریباً ۹۸فیصد کیسوں میں پکڑے گئے لوگ بے قصور نکلے ہیں۔ یہ امّتِ واحدہ کی توہین ہے کہ ہم کسی بھائی اور اس کے خاندان کو مصیبت کی حالت میں اکیلا چھوڑ دیں۔

یہ بھی طے پایا کہ اس پورے مسئلہ پر مسلم قوم کی طرف سے ایک قرطاس ابیض (وہائٹ پیپر) شائع کیا جائے اور اس کو ریلیز کرنے کے لئے ایک بڑا کنونشن دہلی میں منعقد کیا جائے۔ یہ بھی طے پایاکہ اب تک کی روش ترک کرتے ہوئے اب ان معاملات کو بین الاقوامی حقوق انسانی کی تنظیموں، اقوام متحدہ اور دوسرے ممالک کی حکومتوں کے علم میں بھی لایا جائے جو بین الاقوامی طور پر حقوق انسانی پر نظر رکھتی ہیں۔ شرکاء اجتماع کا خیال ہے کہ بین الاقوامی دباؤ حکومتِ ہند پر پڑنا ضروری ہے تاکہ اس کو اپنی ایجنسیوں کے کرتوتوں کے بارے میں سوچنے کا موقع ملے۔

میٹنگ میں مندرجہ ذیل افراد نے شرکت کی: ڈاکٹر ظفرالاسلام خان (صدر مسلم مجلس مشاورت)، جناب محمد احمد (سکریٹری جماعت اسلامی ہند)، مولانا اصغر امام مہدی سلفی(ناظم اعلی جمعیت اہل حدیث)، جناب محمد شفیع مدنی (سکریٹری جماعت اسلامی ہند)، مولانا عبد الوہاب خلجی (صدر اصلاحی موومنٹ)، ڈاکٹر تسلیم رحمانی (صد مسلم پولیٹیکل کاؤنسل)، جناب اعجاز احمد اسلم (سکریٹری جماعت اسلامی ہند و ایڈیٹر ہفت روزہ ریڈینس)، مولانا عبدالرحمٰن عابد (اوکھلا)، ڈاکٹر جاوید احمد، صحافی سید منصور آغا، اختر حسین اختر (سکریٹری ویلفیئر پارٹی)، انیس الرحمٰن (سکریٹری اسٹوڈنٹس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا)، حقوق انسانی کے ایکٹیوسٹ مہتاب عالم، شاہنواز عالم اور راجیو یادو (پی یوسی ایل اتر پردیش کے ذمہ دار)۔

 

ALL INDIA MUSLIM MAJLIS-E-MUSHAWARAT
D-250, Abul Fazal Enclave, Jamia Nagar, New Delhi-110025
Tel.: 011-26946780 Fax: 011-26947346
Email: mushawarat@mushawarat.com Web: www.mushawarat.com

We hope you liked this report/article. The Milli Gazette is a free and independent readers-supported media organisation. To support it, please contribute generously. Click here or email us at sales@milligazette.com

blog comments powered by Disqus